الیکشن میں کتنے افراد کو خریدا گیا اور کتنے ممبران کو دھاندلی کے ذریعہ جتوایا گیا، جہانگیر ترین نے انکشافات کی حامی بھر لی

اسلام آباد(آن لائن) تحریک انصاف کی حکومت کے خلاف ایک بار پھر تمام اپوزیشن جماعتوں نے سر جوڑ لیے ہیں جبکہ پارٹی کے ناراض رہنماء جہانگیر خان ترین نے الیکشن 2018سے متعلق اہم انکشافات کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ذرئع سے معلوم ہوا ہے پاکستان مسلم لیگ ن نے عمران خان حکومت کے خلاف حتمی لائحہ عمل بنانے سے قبل جہانگیر ترین کو پیغام دیا ہے کہ وہ الیکشن 2018سے متعلق میڈیا کو بتائیں کہ اس میں انہوں نے کہا کردار ادا کیا اور اس الیکشن میں کتنے افراد کو خریدا گیا اور کتنے ممبران کو دھاندلی کے ذریعہ جتوایا گیا,اس اس پر ذرائع نے بتایا کہ جہانگیر ترین نے حامی بھر لی ہے اور انہوں نے بہت جلد میڈیا کے سامنے تمام راز بتانے کا فیصلہ کیا ہے, یہاں ذرائع کے مطابق کہ پاکستان مسلم لیگ سابق الیکشن کے خلاف جہانگیر ترین کی معلومات کو بنیاد بنا کر عدالت عظمی جانے کا فیصلہ کر سکتی ہے اور جہانگیر ترین سے ملکر حکومت کو ڈائریکٹ گرانے پر ساتھ نہیں دے گی کیونکہ پاکستان پیپلز پارٹی سمیت دیگر جماعتیں جمہوری حکومت کو غیر جمہوری انداز سے گرانے کے حق میں نہیں ہے اور پاکستان مسلم لیگ نے جہانگیر ترین کی میڈیا ٹاک کا انتظار کر رہی ہے بعدازاں وہ عدالت جانے کا فیصلہ کر سکتی ہے۔دوسری جانب میاں شہباز شریف کی خواہش ہے کہ موجودہ حکومت کو اپنی مدت پوری کرنی چاہیے اور کسی ایسی روایت کا پی ایم ایل این حصہ نہ بنے جو کل ان کے لیے راستے کا پتھر بنے اور اس پر پاکستان مسلم لیگ میں دو بیانیے پر بات چیت ہو رہی ہے۔ذرائع کے مطابق اب دیکھنا یہ ہے کہ جہانگیر ترین ہائی کورٹ کی جانب سے حکم امتناعی خارج ہونے کے بعد ممکنہ نیب کارروائی کا انتظار کریں گے یا پہلے میاں نواز شریف کی خواہش پر حکومت اور سابق الیکشن پر الزامات کی بوچھاڑ کر دیں گے اس پر پاکستان تحریک انصاف کے ذرائع کا کہنا ہے کہ جہانگیر ترین کسی صورت موجودہ حکومت کے خلاف نہیں جائیں گے۔بجٹ منظور کرانے سے متعلق پاکستان تحریک انصاف ذرائع کا کہنا ہے کہ بجٹ آسانی سے پاس ہو جائے گا اور بجٹ پاس ہونے کے بعد احتساب کا عمل مزید تیز ہوگا اور اس میں حکومت ہو یا اپوزیشن یا بیورکریسی کسی کو معاف نہیں کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں