بھارت ،خاتون ڈاکٹر زیادتی کے بعد قتل مدد کی غرض سے آئے افرادنے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔پولیس کو خدشہ

مددکی غرض سے آئے افردنے نوجوان خاتون ڈاکٹرپرینکاریڈی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کردیا۔یہ واقعہ بھارت کے شہرحیدر آباد کی ڈسٹرکٹ رنگاریڈی کے علاقے شادنگر میں پیش آیا ،جہاں سے 25کلو میٹردو خاتون کی نعش ملی۔تفصیل کے مطابق شادنگر کے قریب نوجوان لڑکی کی سکوٹی پنکچر ہوگئی اور دو لوگوں نے اسے مدد کیلئے کہااور بعد ازاں زیادتی کا نشانہ بناکر قتل کردیا۔خاتون ڈاکٹر ہسپتال سے گھر واپسی پر اپنی سکوٹی کے دونوں ٹائر پنکچر پائے۔پولیس نے خدشہ ظاہر کیا کہ ممکن ہے سکوٹی کے ٹائر ملزم نے پنچر کئے ،موٹر شاپ دکان کا سٹاف بھی اس واقعے میں ملوث ہوسکتا ہےیامدد کی غرض سے آئے افرادنے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔تاہم ابھی تک ملزمان کا پتہ نہ چل سکا۔
پولیس سی سی ٹی وی فوٹیج تلاش کررہی ہے موقع پر کپڑے سمیت دیگر اشیاء بھی برآمد کی گئیں ہیں۔زیاتی کے بعد قتل ہونے والی خاتون ڈاکٹر کی بہن بویاں ریڈی نے موقف اختیار کیا کہ بہن نے مجھے9بجے کے قریب فون پر رابطہ کیا اور کہا کہ میری سکوٹی کا ٹائر پنکچر ہوگیا ہے تاہم کچھ لوگوں نے انہیں مدد کی پیشکش کی ہے مگر اس خدشہ کااظہار کیا کہ ٹرک ڈرائیورسے ڈر لگ رہا ہے۔جس پر اس کی بہن نے ٹیکسی کے ذریعے واپس گھر آنے کا مشورہ دیا تھا۔بعدازاں فون بند ہونے کے باعث ان کا رابطہ نہ ہوسکا۔یہ بات بھی قابل غور رہے کہ ٹائر شاپ کے مالک نے موقف اختیا ر کیا کہ پری ینکاریڈی 10بجے کے قریب یہاں سے چلی گئیں تھیں۔تاہم بھارت کی پولیس نے معاملے کی تحقیقات کیلئے 10ٹیمیں تشکیل دے دی ہیں۔جو اس معاملے کی تحت تک پہنچیں گی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں