سابق وزیراعظم نواز شریف جلد رہا ہو جائیں گے

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار ظفر ہلالی نے انکشاف کیا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف جلد رہا ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اگر آپ اپوزیشن کہتے ہیں تو میرے خیال میں جماعت اسلامی اور دوسری جماعتیں مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے علاوہ، انہوں نے بھرپور طریقے سے مقبوضہ کشمیر سے اظہار یکجہتی میں اپنا حصہ ڈالا اور اُس کے لیے انہیں داد بھی دی جانی چاہئیے۔
پاکستان پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن اس وقت ابو بچاؤ میں لگے ہوئے ہیں، اُن کی توجہ صرف ایک ہی طرف ہے ، اپنے والد سے ملاقات کرنے کے لیے آصفہ آئی تھی اُس نے کہا کہ میرے والد صاحب کے تین والو بند ہو گئے ہیں۔ ظفر ہلالی نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے لیے تو خوشخبری ہے کہ نواز شریف صاحب شاید رہا ہو جائیں اس لیے کہ انہوں نے بارہ ارب ڈالر کا وعدہ کر لیا ہے کہ وہ واپس کر دیں گے اور ملک چھوڑ کر چلے جائیں گے۔
میں سمجھتا ہوں کہ اپوزیشن میں فرق کرنا چاہئیے۔ پاکستان پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن ابھی بھی ابو بچاؤ مہم کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دلچسپ بات یہ تھی کہ آصفہ بھٹو زرداری آ کر تقریر کر رہی تھی اور اس موقع پر بلاول نہیں تھا۔ آصفہ کی عمر کیا ہو گی جو اسے پاکستان کی سیاست کے گند میں لا رہے ہیں ۔ آصفہ پڑھی لکھی ہے ، اچھی بچی ہے، ایسا لگ رہا تھا کہ بی بی بول رہی ہے۔
اب اس کو کیا فائدہ ہو گا سیاست میں گھسیٹنے کا ۔ انہوں نے بتایا کہ آصفہ بھٹو کو اسی لیے سیاست میں لایا جا رہا ہے کیونکہ سننے میں آیا ہے کہ آصف علی زرداری اور بلاول کی آپس میں کوئی جھڑپ ہوئی ہےاور وہ کافی دن سے اُن سے ملے نہیں لیکن اس بات کی تصدیق نہیں ہو سکی البتہ افواہیں تو ہیں اور مجھے بھی ایک ایسے شخص نے بتایا ہے جو ایسی چیزوں پر نظر رکھتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں