ملک ریاض کو کچھ نہیں ہوگا وہ رب سے تجارت کرتا ہے

عامر شہزاد اعوان
فرعون لوگوں کو کھانا کھلاتا لوگ کھانا کھاتے فرعون کو سجدہ کرتے چلے جاتے حضرت موسی علیہ اسلام نے رب سے دعا کی کہ یا اللہ فرعون کو غرق کر دے اللہ پاک نے فرمایا موسی جو میں جانتا ہوں تم نہیں جاتنے۔ یہ میری مخلوق کھانا کھلاتا ہے اس کا ذمہ تم اٹھا لو میں غرق کر دیتا ہوں مطلب اللہ پاک کو فرعون کا یہ عمل پسند تھا پھرشیطان نے فرعون سے کہا اسطرح تو ساری دولت ختم ہو جائے گی لوگوں کا کھانا بند کر دیا جائے فرعون نے کھانا بند کر دیا اور یہاں سے اس کا زوال شروع ہوا ملک ریاض کے دسترخوان سے روزانہ لاکھوں لوگ کھاتے ہیںسینکڑوں مریضون کے فری اپریشن ہوتے ہین فلاحی کام کی طویل لسٹ ہے ملک ریاض کو کچھ نہیں ہوگا وہ رب سے تجارت کرتا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں