وزیراعظم عمران خان نے بھی 2016 میں سنتھیا رچی کو ہمبستری کی پیشکش کی تھی.سنتھیا رچی نے خود بتایا کہ عمران خان بھی ان سے ہمبستری کرنا چاہتے تھے

سنتھیا رچی نے خود بتایا کہ عمران خان بھی ان سے ہمبستری کرنا چاہتے تھے: علی سلیم عرف بیگم نوازش علی
علی سلیم عرف بیگم نوازش علی نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان کے موجودہ وزیراعظم عمران خان نے بھی 2016 میں سنتھیا رچی کو ہمبستری کی پیشکش کی تھی۔پاکستان کے سیاسی ماحول میں اس وقت امریکی خاتون سنتھیا رچی کے سیاستدانوں پر لگائے گئے الزامات کی وجہ سے کافی گرما گرمی ہے۔ پاکستان میں مقیم امریکی خاتون سنتھیا نے پیپلزپارٹی کی شہید رہنما بے نظیر بھٹو پر الزامات لگانے کے بعد اب پارٹی کی دیگر اعلیٰ قیادت پر الزامات کی بوچھاڑ کر دی ہے۔سنتھیا رچی نے الزام لگایا ہے کہ رحمان ملک نے انہیں 2011 میں زیادتی کا نشانہ بنایا جب پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت تھی اور رحمان ملک وزیرداخلہ کے عہدے پر فائز تھے۔سنتھیا رچی نے سابق وزيراعظم یوسف رضا گیلانی اور سابق وزیر صحت مخدوم شہاب الدین پر بھی دست درازی کا الزام عائد کیا، اور کہا کہ یوسف رضا گیلانی نے تب دست درازی کی جب وہ ایوان صدر میں مقیم تھے۔سنتھیا کے الزامات کا سلسلہ صرف پیپلز پارٹی پر ہی نہیں رکا بلکہ انہوں نے اپنی توپوں کا رخ مسلم لیگ ن کی جانب بھی موڑ لیا ہے، انہوں نے کہا ہے کہ فکر نہ کریں، ن لیگ کو بھی نہیں چھوڑوں گی، اگلی باری ان کی ہے۔اپنے ایک اور سوشل میڈیا بیان میں کہا کہ میرے پاس اور بھی بہت کچھ ہے، لیکن چند دن آرام کی ضرورت ہے، پی پی قیادت اپنے کارکنوں سے کہے کہ وہ مجھے اکیلا چھوڑ دیں۔اب ایک اور ویڈیو سامنے آئی ہے، جس میں ‏سنتھیا رچی کے الزامات کے بارے میں واشنگٹن میں ان کے قریبی دوست علی سلیم عرف بیگم نوازش نے انکشاف کیا ہے کہ سنتھیا رچی نے 2016 میں بتایا کہ عمران خان بھی ان پر لٹو ہوگئے تھے اور انہیں ہمبستری کی پیشکش کی تھی۔یہ بیان دیتے ہوئے علی سلیم نے کہا کہ اگر وہ جھوٹے ہیں تو امریکی شہری سنتھیا رچی امریکہ میں ان پر مقدمہ کر دیںعلی سلیم عرف بیگم نوازش علی نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان کے موجودہ وزیراعظم عمران خان نے بھی 2016 میں سنتھیا رچی کو ہمبستری کی پیشکش کی تھی۔پاکستان کے سیاسی ماحول میں اس وقت امریکی خاتون سنتھیا رچی کے سیاستدانوں پر لگائے گئے الزامات کی وجہ سے کافی گرما گرمی ہے۔ پاکستان میں مقیم امریکی خاتون سنتھیا نے پیپلزپارٹی کی شہید رہنما بے نظیر بھٹو پر الزامات لگانے کے بعد اب پارٹی کی دیگر اعلیٰ قیادت پر الزامات کی بوچھاڑ کر دی ہے۔سنتھیا رچی نے الزام لگایا ہے کہ رحمان ملک نے انہیں 2011 میں زیادتی کا نشانہ بنایا جب پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت تھی اور رحمان ملک وزیرداخلہ کے عہدے پر فائز تھے۔سنتھیا رچی نے سابق وزيراعظم یوسف رضا گیلانی اور سابق وزیر صحت مخدوم شہاب الدین پر بھی دست درازی کا الزام عائد کیا، اور کہا کہ یوسف رضا گیلانی نے تب دست درازی کی جب وہ ایوان صدر میں مقیم تھے۔سنتھیا کے الزامات کا سلسلہ صرف پیپلز پارٹی پر ہی نہیں رکا بلکہ انہوں نے اپنی توپوں کا رخ مسلم لیگ ن کی جانب بھی موڑ لیا ہے، انہوں نے کہا ہے کہ فکر نہ کریں، ن لیگ کو بھی نہیں چھوڑوں گی، اگلی باری ان کی ہے۔اپنے ایک اور سوشل میڈیا بیان میں کہا کہ میرے پاس اور بھی بہت کچھ ہے، لیکن چند دن آرام کی ضرورت ہے، پی پی قیادت اپنے کارکنوں سے کہے کہ وہ مجھے اکیلا چھوڑ دیں۔اب ایک اور ویڈیو سامنے آئی ہے، جس میں ‏سنتھیا رچی کے الزامات کے بارے میں واشنگٹن میں ان کے قریبی دوست علی سلیم عرف بیگم نوازش نے انکشاف کیا ہے کہ سنتھیا رچی نے 2016 میں بتایا کہ عمران خان بھی ان پر لٹو ہوگئے تھے اور انہیں ہمبستری کی پیشکش کی تھی۔
یہ بیان دیتے ہوئے علی سلیم نے کہا کہ اگر وہ جھوٹے ہیں تو امریکی شہری سنتھیا رچی امریکہ میں ان پر مقدمہ کر دیں

اپنا تبصرہ بھیجیں