وکلاء آپے سے باہر ۔۔چیف جسٹس سے وکلاء گردی پر از خود نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا گیا

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ہنگامہ آرائی کے دوران وکلا نے وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان کو تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔بتا یا گیاہے کہ پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلا کی ہنگامہ آرائی پر صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان پی آئی سی پہنچے تو مشتعل وکلا نے انہیں بھی تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ شرپسند عناصر نے انہیں اغوا کرنے کی کوشش کی ہے،انصاف پسند وکلا آج رنجیدہ اور دکھی ہیں۔صوبائی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ میں وکلا کی بہتری کیلئے آیا تھا،سارا معاملہ نمٹا دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ ڈرنے والے نہیں ہیں اور ڈی آئی جی آپریشنز کے ساتھ ملکر کارروائی کررہے ہیں،ذمہ داران کیخلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔‎فیاض الحسن چوہان کا نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میں چیف جسٹس سے درخواست کروں گا کہ وہ اس معاملے کا ازخود نوٹس لیں۔ جتنے بھی سینئر وکلاء اس میں ملوث ہیں ان کے لائسنس معطل کیے جائیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں