ہماری بیویوں سے فیملی ویلفئیر سنٹر میں ڈانس کرایا جاتا ہے، بھارتی فوجی اہلکار نے پول کھول دیا سنٹر میں فوجی اہلکار اپنی بیویوں کو مجبوری میں لاتا ہے ،بھارتی فوجی اہلکاروں کو افسروں سے خطرہ ہے ، ہم مرتے بھی ہو تو ہمیں گاڑی نہیں دی جاتی ۔بھارتی فوجی اہلکار

ہماری بیویوں سے فیملی ویلفئیر سنٹر میں ڈانس کرایا جاتا ہے ، بھارتی فوجی اہلکار نے پول کھول دیا ۔ تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر بھارتی فوج کے اہلکار کی ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ہماری بیویوں کو فیملی ویلفیئر سینٹر میں ڈانس کرنے کا کہا جاتا ہے۔ افسروں کی بیویوں اپنی من مانی کرتی ہیں انہیں جو چاہیے ہوں دیا جاتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ افسر کہتے ہیں مجھے سیلوٹ ماروں یا نہیں میری بیوی کو سیلوٹ ماروں۔ بھارتی اہلکار کا کہنا ہے کہ فیملی ویلفئر سنٹر میں ہراساں کرنے کے لئے رکھا جاتا ہے ، بھارتی فوجی کا کہنا ہے کہ فوجی اہلکاروں کو گھر کی کھیتی سمجھا جاتا ہے۔ اگر کوئی کام سے انکار کرے تو اس کی پوسٹنگ کرکے ہراساں کیا جا تا ہے۔

بھارتی اہلکار کا کہنا ہے کہ جتنی کرپشن بھارتی فوج میں ہے کسی اور ادارے میں نہیں ہے، یہاں پر کوئی سوال اٹھا نہیں سکتا ۔

راشن غائب کر دیا گیا ہے۔ ہمیں ٹھیک سے کھانا بھی نہیں دیا جاتا ۔ بھارتی اہلکار کا کہنا ہے کہ فوجی افسر اور ان کی بیویاں ہم سے نجی کام لیتی ہیں ۔ جس کی وجہ سے ہم کامیاب نہیں ہو پاتے ۔ ہمارا دھیان نجی کاموں کی جانب ہے۔ کوئی بھی آکر بھارتی فوج کو مار جاتا ہے ، بھارتی فوجی اہلکار نے پول کھولتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوجی اہلکاروں کو افسروں سے خطرہ ہے ، ہم مرتے بھی ہو تو ہمیں گاڑی نہیں دی جاتی ۔
فیملی ویلفیئر سینٹر کو بند کیا جائے ،یہاں پر فوجی اہلکار اپنے فیملی کو مجبوری سے لاتا ہے تاہم انہیں ہراساں کیا جاتا ہے اور پریشان کیا جاتا ہے، ایک ْافسر کے گھر میں 30 افسر تعینات ہوتے ہیں جو ان کے گھر کے کام کرتے ہیں اور برتن تک دھوتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ افسروں نے نوجوان اہلکاروں کے خلاف یونٹ بنا رکھا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں