17 سالہ لڑکی سے سالگرہ پر 6 افراد کی پارک میں اجتماعی زیادتی

6 افراد نے لڑکے دوست کو پارک میں باندھ دیا، لڑکی کے ساتھ زیادتی کی ویڈیو بھی بناتے رہے، نیم بے ہوشی کی حالت میں چھوڑ کر فرار ہو گئ بھارت میں ایک افسوسناک واقعہ پیش آیا جہاں گیارہویں کلاس کی طالبہ کو سالگرہ پر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔17 سالہ لڑکی کو اس کی سالگرہ کے روز ایک پارک میں 6 افراد نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور بلیک میل کرنے کے لیے اس کی ویڈیو بھی بنائی۔بھارتی میڈیا کے مطابق تامل ناڈو میں گیارہویں جماعت کی طالبہ دوست کے ہمراہ اپنی 17 ویں سالگرہ منانے ایشوریہ نگر کے پارک آئی تھی،واپسی پر 6 کارندوں پر مشتمل گینگ نے انہیں گھیر لیا۔
طالبہ کے دوست کو گھسیٹ کر پارک کے دوسرے حصے میں لے جا کر باندھ دیا اور مارا پیٹا جس سے وہ بے ہوش گیا۔لڑکے کو باندھنے کے بعد گینگ کے ارکان نے نے طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔لڑکی کو نیم بے ہوشی کی حالت میں چھوڑ کر فرار ہو گئے۔پولیس نے متاثرہ لڑکی کی والدہ کی درخواست پر بروقت کاروائی کرتے ہوئے 6 میں سے 4 ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔خیال رہے کہ بھارت میں خواتین کے خلاف جنسی جرائم میں تیزی سے اضافہ ملکی معیشت پر شدید منفی اثرات مرتب کر رہا ہے۔بھارتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق 2007ء سے لے کر 2016ء کے دوران بھارت میں خواتین کے خلاف جرائم کے ارتکاب میں 83 فیصد اضافہ نوٹ کیا گیا ۔ عالمی بنک کی ایک اور رپورٹ کے مطاق اس صورتحال کے نتیجہ میں 2004ء سے 2012ء کے دوران دو کروڑ ملازمت پیشہ بھارتی خواتین جو نیویارک، لندن اور پیرس کی مجموعی آبادی کے برابر ہیں اپنی ملازمتوں کو خیر باد کہنے پر مجبور ہو گئیں جو بھارتی معیشت کے لئے ایک بڑا دھچکا ہے۔میک کنسے گلوبل انسٹی ٹیوٹ کی رپورٹ کے مطابق ملکی بھارت میں 2025 ء تک ملکی معیشت میںخواتین کے بھرپور کردار سے جی ڈی پی میں 51.50 لاکھ کروٖڑ روپے کا اضافہ کیا جا سکتا ہے۔ بھارت میں اس وقت 27 فیصد خواتین ملازمت پیشہ ہیں ۔بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں مارکیٹنگ ایگزیکٹو کی حیثیت سے کام کرنے والی خاتون نے بتایا کہ خواتین کے خلاف بڑھتے جرائم نے انہیں شدید عدم تحفظ کا شکار کر دیا ہے ۔
اس صورتحال سے نمٹنے کے لئے انہیں اپنی تنخواہ کا بڑا حصہ خرچ کر کے اپنی گاڑی خریدنا پڑی اور ڈرائیور رکھنا پڑا جن کے بغیروہ گھرسے باہر نکلنے کا تصور بھی نہیں کرسکتیں۔ اس کے علاوہ وہ جب بھی گھر سے باہر جاتی ہیں ٹیزر گن اور پیپر سپرے ضرور ساتھ رکھتی ہیں۔ نئی دہلی میں ہی ایک ملٹی نیشنل کمپنی میںاہم عہدے پر تعینات خاتون نے بتایا کہ انہوں نے اپنے اور اپنے بچوں کے تحفظ کی خاطر اپنے گھر میںخطیر رقم خرچ کرکے ایک درجن کے قریب سکیورٹی کیمرے نصب کرائے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں